Frequently asked questions

ہمارا تعارف(تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں)


حکم ہے کہ بیٹی کو جوانی کی دہلیز پر قدم رکھتے ہی رخصت کر دو مگر ہمارے ہاں معاشرتی ناہمواریوں اور فضول رسوم ورواج بیٹیوں کی رخصتی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہیں۔عام کم آمدنی والا شخص پوری عمر زندگی کی گاڑی کو گھسیٹتاہے اور کسی نہ کسی طرح گزر اوقات کرتا ہے مگر جب بیٹی کی رخصتی کا وقت آتا ہے تو پونچی کچھ نہیں ہوتی۔مارکیٹ میں اشیاء کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہوتی ہیں،بیٹی کو دو کپڑوں میں رخصت کرنے کی بھی کہیں حوصلہ افزائی نہیں ہوتی اور بیٹی کی رخصتی کے لوازمات کیلئے رقم کا بندوبست بھی آسان نہیں ہوتا۔ہمارے ہاں صرف رمضان میں اشیاء ضروریہ مہنگے داموں فروخت کر کے مال بنانے کا ہی رواج نہیں بلکہ کتابوں کے سیزن میں اس مقدس پیشہ سے منسلک لوگ بھی خوب کماتے ہیں اور شادیوں کے سامان کے بیوپاری یہ سوچے بغیر کہ سامان خریدنے والا کس قدر مجبور وپریشان ہوتا ہے کئی گنا منافع کے حصول کا موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے۔مہنگائی اور اضافی مصنوعی مہنگائی سے ضروری لوازماتِ رخصتی کی خریداری بھی مشکل ترین ہو چکی ہے نتیجتاً اسی لاکھ سے زائد لڑکیاں والدین کے گھر بیٹھی بڑھاپے کی طرف بڑھ رہی ہیں۔
بیٹی والا(ایس ایم سی پرائیویٹ)لمیٹڈحکومت ِپاکستان سے باقاعدہ منظور شدہ کاروباری ادارہ ہے جو کم آمدنی والے والدین کو بیٹیوں کی رخصتی کا بوجھ اٹھانے میں معاونت فراہم کرتا ہے،ہر ممکن کوشش کی جاتی ہے کہ رخصتی کے تمام مراحل میں والدین کا کم سے کم خرچ ہو اور یہ مرحلہ بخیر وعافیت عزت کے ساتھ انجام پا جائے۔خدا کرے یہ پرخلوص معاونت بارگارہِ الہیٰ میں مقبول ہو اور ہمارے لئے ذریعہ نجات بن جائے (آمین)





©MuddysnowProductions

  • Vimeo Social Icon
  • Facebook Social Icon
  • Instagram Social Icon
  • YouTube Social  Icon
  • Twitter Social Icon